Headlines

ممتاز روسی سائنسدان نے انسانوں سے متعلق ایسا دعویٰ کردیا کہ انہیں عہدے سے ہٹا دیا گیا

ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک) انسانوں کے 900سال تک زندہ رہنے کا دعویٰ کرنے والے ممتاز روسی سائنسدان ڈاکٹر الیگزینڈر کدریوتسیف کو عہدے سے ہٹا دیا گیا۔
 دی مرر کے مطابق ڈاکٹر الیگزینڈر کو ان کے حیران کن نظریات کی وجہ سے ہٹایا گیا ہے۔ ان کا ماننا ہے کہ ایک وقت تھا جب انسان900سال سے تک عمر پاتے تھے مگر ہمارے آباﺅ جداد کے گناہوں کی وجہ سے ہماری عمریں کم ہو گئیں۔ڈاکٹر الیگزینڈر رشین اکیڈمی آف سائنسز واویلوف انسٹیٹیوٹ آف جنرل جنیٹکس کے سربراہ تھے۔ روس کی وزارت تعلیم کی طرف سے انہیں عہدے سے ہٹائے جانے کی وجہ نہیں بتائی گئی تاہم ان کے مذہبی عقائد کو اس کی وجہ بتایا جارہا ہے۔ گزشتہ سال مارچ میں روس کے شہر منسک میں ایک کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر الیگزینڈر نے اپنے ان نظریات کا کھل کر اظہار کیا تھا۔اپنے خطاب میں انہوں نے کہا تھا کہ ”ماضی بعید میں ہمارے آباﺅاجداد کی عمریں سینکڑوں سال ہوتی تھیں۔ تاہم ان کے گناہوں کی وجہ سے جدید انسان کے اندر جینیاتی بیماریاں آ گئیں، جن کے سبب ہماری عمر کم ہو گئی۔ 7ویں نسل تک کے بچے اپنے باپوں کے گناہوں سے متاثر ہوتے ہیں۔ “ 
انہوں نے کہا کہ ” ہمارے گناہ ہمارے جینز پر اثرانداز ہوتے ہیں۔ اگر ہمارے گناہوں سے ہمارے جینز میں کوئی میوٹیشن آتی ہے تو وہ ہماری نسلوں کو منتقل ہوتی ہے جس کے سبب ہماری نسلیں مختلف بیماریوں کا سبب بنتی ہیں۔اگر آپ صحت مند نسلیں چاہتے ہیں تو بری عادتوں اور گناہوں سے بچیں۔ “

Leave a Reply